اب ہم امریکی ثالثی نہیں چاہتے، فلسطین

جانب پوتن  نے فلسطینی عوام کی ہمیشہ سے حمایت کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ موجودہ حالات   ہر کس  کی خواہش  ہونے والے نکتے سے انتہائی دُوری  پر ہیں

اب ہم امریکی  ثالثی نہیں چاہتے، فلسطین

صدرِ فلسطین  محمود عباس  کا کہنا ہے کہ ہم    مشرق وسطی  مذاکرات میں   اب کے بعد امریکہ کی ثالثی کو قبول  نہیں کریں  گے۔

محمود عباس  نے رُوسی دارالحکومت ماسکو میں   روسی صدر ولادیمر پوتن   سے   ملاقات  میں کہا کہ وہ  مشرق وسطی کے مسائل کے حل میں کئی طرفہ  ثالثی پر مبنی مذاکرات کے خلاف نہیں ہیں۔

مذکورہ  مذاکرات  کے ایران  کے حوالے سے  طے پانے والے معاہدے کی طرح  4 یا پھراس سے زیادہ ملکوں پر مشتمل کسی ڈھانچے   کے ماتحت   سر انجام  پا سکنے   کا اشارہ دینے والے  صدر عباس نے  بتایا کہ "امریکی  حرکتوں کی بنا پر  سامنے آنے والی صورتحال پر  اب ہم  ان کے ساتھ  ثالث کی حیثیت تعاون    قائم کرنے کو مسترد کرتے ہیں۔"

دوسری جانب پوتن  نے فلسطینی عوام کی ہمیشہ سے حمایت کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ موجودہ حالات   ہر کس  کی خواہش  ہونے والے نکتے سے انتہائی دُوری  پر ہیں۔

خیال رہے کہ  پوتن نے  فلسطینی صدر سے ملاقات سے قبل اپنے اعلان   میں کہا تھا کہ انہوں  نے ٹرمپ  سے ٹیلی فونک ملاقات کی ہے  جس دوران تنازعہ   فلسطین و اسرائیل  پر غور کیا   گیا ہے۔

 



متعللقہ خبریں